گلگت بلتستان میں کوئی خالصہ سرکار زمین نہیں۔ کیپٹن شفیع

گلگت : اسلامی تحریک کے رکن قانون ساز اسمبلی اور قائد حزب اختلاف گلگت بلتستان اسمبلی کیپٹن (ر) محمد شفیع نے کہا ہے چیف الیکشن کمشنر کی سمری کو واپس کیا جائے، نئی سمری اپوزیشن کو اعتماد میں لے کر بنائیں اور غیر متنازعہ شخص کو چیف الیکشن کمشنر لگایا جائے۔ نو تعینات چیف جج کو کسی صورت تسلیم نہیں کرسکتے اسمبلی قرارداد کی توہین کی گئی ہے۔ مہمان نوازی کا حق ضرور ادا کرینگے۔ لینڈ ریفارمز کمیشن ایک ڈرامہ کے سوا کچھ نہیں ہے۔ حفیظ الرحمن لینڈ ریفارمز کمیشن کے ذریعے اپنے من پسند فیصلے کرواتا ہے اس لیئے لینڈ ریفارمز کمیٹی پر عدم اعتماد کرتے ہیں۔

اسلامی تحریک کے رکن قانون اسمبلی نے کہا کہ گلگت بلتستان میں کوئی خالصہ سرکار زمین نہیں ایک ایک انچ زمین گلگت بلتستان کے عوام کی ہے۔ گلگت بلتستان میں کرپشن کی تاریخ رقم ہو چکی ہے۔ گلگت بلتستان کا نظم و نسخ 4 ٹھیکداروں کے گرد گھومتا ہے۔ انہوں نے آئندہ سال کے بجٹ کے حوالے سے کہا ہے پری بجٹ سیشن بلائے بغیر بجٹ پیش کیا تو بجٹ کو مسترد کرینگے۔ حفیظ الرحمن صرف اپنے حلقے کو مدنظر رکھ کر بجٹ بنواتا ہے۔ دیامر غذر کے عوام بھی پسے ہوئے ہیں۔ ہم دیامر سے تعلق رکھنے والی خاتون منسٹر کے خلاف کاروائی کی مزمت کرتے ہیں۔ اگر حفیظ الرحمن میں ہمت ہوتی تو دیامر کے دوسرے وزراء کے خلاف بھی کاروائی کرتے۔

کیپٹن شفیع خان کا کہنا تھا کہ وزیر اعلی کے دیامر دورے پر صرف ثوبیہ مقدم نے نہیں بلکہ دیگر تین اور وزراء نے بھی گھاس نہیں ڈالا تھا۔ تحریک حمایت مظلومین صرف اہل تشیع کے مظلومین کی نہیں بلکہ تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے مظلومین کی تحریک ہے۔ تمام مکاتب فکر کو دعوت دیتا ہوں کہ وہ تحریک حمایت مظلومین کے ساتھ شامل ہو جائیں۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار گلگت خزانہ روڈ میں تحریک حمایت مظلومین کے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here