ندائے شہید ضیاءالدین رضوی فکر و شعور و آگاہی

مزار شہید آغا سید ضیاءالدین رجوی

آہ ! بے پناہ وسعت رکھنے والی زمین کا یہ قابلِ رشک ٹکڑا کہ جہاں اک تاریخ مدفن، اور اک تحریک سکوت کی حالت میں ہے فکر و شعور کے حامل حُریت کے پروانوں کے لئیے مانندِ شمع، کہ جو راہیان و دیوانگانِ حُریت کے قلوب کی گرمائش کا سبب اور لنگر ہے فکری رزق کا۔

اہلِ ظاہر کے لئے مقبرہ جبکہ صاحبانِ بصیرت کے واسطے عزم و وفا اور شجاعت و اخلاص کا نشانِ منزل، یہ فصیل ہے اُس نظریاتی عمارت کی کہ جس کی بنیادوں کو باشرف لہو کا نذرانہ دے کر مضبوط کیا گیا۔

یہ مرکز ہے اُن متوالوں کا جو جان سے زیادہ مقصد عزیز رکھتے ہوں، یہ محور ہے اُن باشرف نفوس کا جو موت میں حیاتِ جاودانی کا عقیدہ رکھتے ہیں، یہ علامت ہے اُس وفا شعاری کی کہ جس کا اعادہ لبیک یاحُسینؑ کی صورت میں کیا گیا۔

یہ فقط مٹی، پتھر اور غارے سے بنا ڈھانچہ نہیں بلکہ اک خاموش درسگاہ ہے کہ جو لفاظی سے نکل کر عملیت پسندی کی دعوت و ترغیب دیتی ہے۔ گرچہ ہم بڑا دردِ دل لے کر یہاں فاتحہ پڑھنے جاتے ہیں جبکہ فاتحہ یہ اہلِ مزار دراصل ہم اور ہماری اجتماعی بے حسی و بے شعوری پر پڑھتے ہوں گے۔

ندائے شہید آغا سید ضیاءالدین رضوی فکر و شعور و آگاہی

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here